پاکستان اور روس کے درمیان آف شور گیس پائپ لائن کا منصوبہ کے ایم او یو پر دستخط کردیئے گئے

ماسکو، رپورٹ: شاہد گھمن

پاکستان اور روس کے درمیان تعلقات دن بدن مضبوط ہوتے جا رہے ہیں اوراس سلسلہ میں پاکستان اور روس کا مشترکہ توانائی منصوبے کا اہم سنگ میل عبور کر لیاگیا پاکستان اور روس کے درمیان آج روس کی وزرارت توانائی کے ساتھ آف شور پائپ لائن کا منصوبہ طے پا گیااس سلسلہ میں ماسکو میں پاکستانی اور روسی حکام نے ایم او یو پر دستخط کردیئے ہیں پاکستان کی طرف سے ایڈیشنل سیکرٹری پٹرولیم ڈویزن شیرافگن خان اورروس کے ڈپٹی وزیر پٹرولیم اناطولی ینوسکی نے ایم او یو پر دستخط کیئے ہیں دستخط کرنے کے وقت روس میں تعینات پاکستانی سفیر قاضی خلیل اللہ اور انٹرسٹیٹ گیس سسٹم پرائیویٹ لیمیٹڈ کے مینجنگ ڈائرلیکٹر مبین صولت بھی موجود تھے

سب سے پہلے اس منصوبے کی فزیبلٹی رپورٹ تیا رہو گی جبکہ اس منصوبے میں روس پاکستان میں گیس پائپ لائن کی مد میں 10ارب ڈالرخرچ کرے گا۔ سمندر کے راستے گیس فراہمی کے لیے روس پائپ لائن بچھائے گا۔ یہ منصوبہ تین سے چار سال میں مکمل ہوگا جبکہ پاکستان یومیہ ایک ارب مکعب فٹ تک گیس خریدے گا۔روسی کمپنی بلٹ، اون، آپریٹ اینڈ ٹرانسفر کی بنیاد پر منصوبہ مکمل کرے گی۔

شیر افگن خان نے “دیس پردیس نیوز” سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس منصوبے کی فزیبلٹی رپورٹ کی تیاری میں یہ دیکھا جائے گا کہ کس راستے سے روس سے پاکستان تک گیس پائپ لائن بچھائی جا سکتی ہے اس کے بعد اصل تخمینہ کا اندازہ لگایا جائے گا۔

معاہدے کے بعد شیر افگن خان اور روس کے ڈپٹی وزیر پٹرولیم اناطولی ینوسکی نے ایک دوسرے کو مبارکبا دی اور تحائف کا تبادلہ بھی کیا.

اپنا تبصرہ بھیجیں